” مدحتِ مصطفٰی ” (نعت انتخاب)


گل بخشالوی صاحب کی ایک اور گراں قدر ادبی خدمت
کسی بھی قافلے کے بطریقِ احسن سفر کرنے اور کامیابی سے منزلِ مقصود تک پہنچنے میں سب سے اہم کردار اس قافلے کے قافلہ سالار کا ہوتا ہے، گل بخشالوی صاحب ایک ایسے ہی نہایت قابل قافلہ سالار ہیں جن کی قیادت میں شعرا اور ادیبوں کی ایک بڑی تعداد اپنا ادبی سفر جاری رکھے ہوئے ہے، گل بخشالوی صاحب ادبی تنظیم قلم قافلہ کے بانی اور منتظمِ اعلٰی ہیں، گل بخشالوی صاحب نے آج سے تقریباً چار دہائی قبل سن 1984 میں ادبی تنظیم قلم قافلہ کھاریاں کی بنیاد رکھی اور باقاعدہ اپنے ادبی سفر کا آغاز کیا، 1984 میں ہی انھوں نے قلم قافلہ کے پلیٹ فارم سے پہلا غزلوں کا انتخاب ” سوچ رْت” شائع کر کے ادبی خدمات کا آغاز کیا ، اس کے بعد گل بخشالوی صاحب نے اردو شعر و ادب اور اس وابستہ شعرا اور ادبا کی خدمت اور ترویج کے لیے اس قدر لگن محنت جانفشانی کے ساتھ بےلوث ہو کر کام کیا کہ قلم قافلہ ادبی تنظیم ملک گیر سطح پر پہچانی اور مانی جانے لگی، آپ نے 1984 سے لے کر 2024 تک متعدد غزلوں کے انتخاب، اپنی ذاتی شاعری کی متعدد کتابیں، سفرنامے اور متعدد نعتیہ انتخاب شائع کیے، آپ کی شائع شدہ کتب کی تعداد 40 ہے، اس کے علاوہ آپ کی صحافتی خدمات کی ایک الگ طویل داستان ہے جو ایک علیحدہ مفصل تذکرے کی متقاضی ہے، آپ کی صحافتی سرگرمیوں کے زیرِ اثر شائع ہونے والا اعلٰی معیار کا سہ ماہی کھاریاں گزٹ نہایت اہمیت کا حامل رسالہ ہے جس میں صحافتی تحریروں کے ساتھ ساتھ قلم قافلہ کے زیرِ اہتمام منعقد ہونےوالی علمی و ادبی تقریبات اور قلم قافلہ سے منسلک احباب کا بخوبی تذکرہ کیا جاتا ہے. قلم قافلہ کے پلیٹ فارم سے گل بخشالوی صاحب نے 1984 سے لے کر اب تک بےشمار شاعروں اور ادیبوں کو نہ صرف متعارف کروایا ہے بلکہ ان کی اور ان کے کلام کی اس قدر مؤثر انداز میں پذیرائی اور ترویج کی ہے کہ ان میں سے بیشتر شخصیات آج ملکی سطح پر اپنا ایک الگ ادبی مقام اور شناخت رکھتی ہیں یہی وجہ ہے کہ گل بخشالوی صاحب کی ادبی خدمات کا اعتراف اعلٰی ترین تعلیمی سطح پر بھی کیا گیا ہے یہی وجہ ہے کہ گل بخشالوی صاحب کے تخلیقی کام اور ادبی خدمات پر اب تک چار ایم فل کے مقالے لکھے جا چکے ہیں
گل بخشالوی صاحب نے اپنی ادبی خدمات کے سلسلے کو جاری رکھتے ہوئے حال ہی میں پاکستان اور انڈیا کے شعرا کرام کے نعتیہ کلام پر مشتمل خوبصورت نعتوں کا انتخاب ” مدحتِ مصطفٰی”کے نام سے شائع کیا ہے، خوبصورت گیٹ اپ کے ساتھ شائع ہونے والی نعت کی اس اہم ترین کتاب میں عقیدت اور محبت کے ساتھ کہی گئی شعرا اور شاعرات کی نعوت کو نہایت اہتمام کے ساتھ شائع کیا گیا ہے. راقم الحروف کی کہی ہوئی نعت بھی اس خوبصورت انتخاب میں شامل ہے گل بخشالوی صاحب کی طرف سے ” مدحتِ مصطفٰی ” مجھے بذریعہ ڈاک موصول ہوئی ہے جس پر میں گل بخشالوی صاحب کا تہہِ دل سے شکر گزار ہوں ، گل بخشالوی صاحب کو "مدحتِ مصطفٰی ” کی اشاعت پر بہت بہت مبارکباد ، میری دعا ہے کہ قلم قافلہ گل بخشالوی صاحب کی قیادت میں یونہی کامیابی کی منازل طے کرتا رہے اللہ تعالٰی گل بخشالوی صاحب کو اس بہترین ادبی خدمت پر اجرِ عظیم عطا فرمائے اور صحت و سلامتی کے ساتھ خوشیوں بھری طویل عمر عطا آمین.
دعاگو :عتیق الرحمٰن صفی
صدر گجرات ادبی فورم


جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے