پروفیسر ڈاکٹر ہارون الرشید تبسم


جناب پروفیسر ڈاکٹر ہارون الرشید تبسم ہمارے عہد کی ایک نادر اور اعجوبہ شخصیت ہیں۔ دبستان سرگودھا کے یہ عظیم فرزند کثیر الجہت بھی ہیں اور کثیر الاشاعت بھی۔ اُن کی طبع شدہ کتب کی دوسری سنچری جلد مکمل ہونے والی ہے۔ ہم چاہے کتنا شتابی اور سرعت کے ساتھ مطالعہ کر لیں، اُن کی فکری رو اور قلم کی برق رفتاری کا ساتھ نہیں دے پاتے۔ ہماری کتب ایک ایک کر کے اشاعت پذیر ہوتی ہیں مگر اُن کی طرف سے جب بھی کتب کا تحفہ ملتا ہے تو وہ اکثر چھ کتب پر مشتمل ہوتا ہے۔ یہ چنداں آسان کام نہیں ہے۔ ذہن انتہا درجے زر خیز ہو، تخلیق کار وفور مطالعہ سے سرشار ہو، تھکن اور آرام کے الفاظ اُس کی زندگی کی لغت سے خارج ہوں بلکہ اُسے اسی دقت طلب کام میں ذہنی و قلبی آسودگی محسوس ہوتی ہو تو پھر اتنا گراں قدر علمی اثاثہ اظہار پاتا ہے۔ یہاں تو ایک آدھ کتاب کی تخلیق کے بعد ہی لکھاریوں کا دم پھول جاتا ہے اور یہ تسلیم کرنے کی بجائے کہ اُن کے فکر و فن کے چشمے سوکھ چکے ہیں، ایک بھونڈی دلیل سامنے لاتے ہیں کہ غالب کا بھی تو ایک ہی دیوان ہے۔

جناب پروفیسر ڈاکٹر پارون الرشید تبسم مسلسل لکھتے چلے جا رہے ہیں۔ وہ کسی دوڑ میں شریک نہ ہو کر بھی معاصرین سے چار قدم آگے دکھائی دے رہے ہیں۔ اُن کی فکر کا ایک اہم پہلو علامہ اقبال ر کے افکار کی تشہیر ہے تا کہ نئی نسل استفادہ کر کے دانائے راز کے افکار کی روشنی میں آگے بڑھے۔ اقبال ر کی شخصیت اور اُن کے فکر و فن پر پہلے بھی اُن کی کئی درجن کتب اشاعت پذیر ہو چکی ہیں اور یوم اقبال ۲۰۲۳ کے حوالے سے بھی اُن کی ۳ کتب
۱۔انسانی اوکڑاں تے اقبال { علامہ اقبال کے افکار و نظریات کے حوالے سے پنجابی زبان میں ۱۲ مضامین کا مجموعہ}
۲۔خوشبوئے اقبال { ۲۹ اقبالیاتی کتب پر پر مفصل مضامین کا مجموعہ}
۳۔ہلال اقبال { یہ بہت اہم کتاب ہے جس میں اقبال ر کے فکر و فن کی اہم ترین جہات پر ۲۲ بہترین مضامین شامل ہیں}
۴۔ زیبائی خیال { اس کتاب میں بھی خوب صورت ادبی و علمی مضامین ہیں۔ کئی مضامین علامہ اقبال کے حوالے سے ہیں}
۵۔رشحات آرزو{ اس کتاب میں اہم قومی و ملی موضوعات اور قومی شخصیات بہ شمول علامہ اقبال ر ۳۰ مضامین شامل ہیں}
۶۔ داستان کتب { ڈاکٹر صاحب کا اختصاص یہ بھی ہے کہ تازہ کتب پر بہترین مضامین تحریر کرتے ہیں ۔ ایک کتاب پر مضمون ایک ہی نشست کا نتیجہ ہوتا ہے۔ اس میں ۲۱ کتب پر مضامین شامل ہیں}
میں ڈاکٹر صاحب کا ممنون و متشکر ہوں کہ ہمیشی کی طرح اُنہوں نے آخر الذکر کتاب میں میری ۲ تازہ کتب "شاہ کونین: کرم ” اور "دبستان فلم کے نعت نگار” پر بھی مضامین تھریر کیے ہیں۔
اللہ کریم انہیں صحت کی دولت سے بہرہ مند رکھے تا کہ اسی طرح فعال رہیں

اکرم کنجاہی


Print Friendly, PDF & Email
Author: ایڈیٹر

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے