معروف سرائیکی دانش ور اور صحافی ارشاد امین انتقال کر گئے

معروف سرائیکی دانش ور اور صحافی ارشاد امین انتقال کر گئے

رضی الدین رضی


معروف سرائیکی دانشور اور صحافی ارشاد امین اتوار پانچ نومبر کو ملتان کے ایک ہوٹل میں انتقال کر گئے ۔ان کی عمر 63 سال تھی اور وہ گزشتہ تین روز سے ملتان کے مقامی ہوٹل میں مقیم تھے۔ارشاد امین سمیت کئی دانش وروں کو حال ہی میں وفاقی وزیر اطلاعات مرتضی سولنگی کی ہدایت پر پی ٹی وی پر خصوصی پروگراموں کی میزبانی کا ٹاسک دیا گیا تھا اور ان پروگراموں کی ریکارڈنگ کے لیے ملتان آئے ہوئے تھے ۔ دو روز قبل اچانک شدید علالت کے باعث انہیں ہسپتال داخل کرایا گیا بعد ازاں طبیعت بہتر ہونے پر ہوٹل منتقل کردیا گیا لیکن آ ج شام کو وہ خالق حقیقی سے جاملے ۔
ارشاد امین معروف لکھاری ، صحافی اور سرائیکی تحریک کے روح رواں تھے ان کا تعلق چاچڑاں شریف ضلع رحیم یارخان سے تھا وہ 25 دسمبر 1960 میں پیدا ہوئے ۔ ارشاد امین نے گورنمنٹ ہائی سکول خان پور سے میٹرک کیا ۔ انہوں نے1983 میں چاچڑاں شریف میں سرائیکی ادبی و ثقافتی میلہ کروایا جس میں پہلی بار ملک بھر سے دانشوروں ، شعراء ،گلوکاروں اور ادیبوں نے شرکت کی یہ میلہ سرائیکی ادبی ، ثقافتی و صوبے کی تحریک میں اہم موڑ ثابت ہوا ۔ ارشاد امین کی زیر ادارت سرائیکی زبان کا اخبار” سجاک“ شائع ہوتا رہا ۔ انہوں نے ملتان میں ہفت روزہ الشمس کی بھی ادارت کی ۔
ارشاد امین لاہور کے ایک رسالے ہم شہری ، ایف ایم 103 اور مختلف نیوز ایجنسیوں کے ساتھ وابستہ رہے جبکہ ان کی تحریریں قومی اخبارات ، رسائل و جرائد میں شائع ہوتی رہیں ۔
وہ اب مستقل طور پر لاہور میں قیام پذیر تھے ۔ ان کے پسماندگان میں بیوہ اور ایک بیٹی شامل ہیں ۔


www.girdopesh.com

Print Friendly, PDF & Email
Author: ایڈیٹر

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے